40

پٹرول کی قیمتوں میں ہوشربا اضافہ ، پیپلز پارٹی نے ایسا اعلان کردیا کہ حکومتی مشکلات مزید بڑھ جائیں

اسلام آباد(اعتبار نیوز) پیپلزپارٹی نے پارلیمان کے اندر پٹرول کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف احتجاج جاری رکھنے کا اعلان کرتے ہوئے کہاہے کہ وزیراعظم کا ریلیف پیکج عوام کے ساتھ مذاق ہے،نئے پاکستان کو کون زندہ رہ سکتا ہے؟ لوگ تو اب یوٹلٹی بلز بھی ادا نہیں کرسکتے،سینیٹ کے آنے والے اجلاس میں بھی شدید احتجاج ہوگا۔

سینیٹر روبینہ خالداورسینیٹربہرامند تنگی کےہمراہ میڈیاسےگفتگو کرتےہوئےسینیٹر شیری رحمان نےکہا کہ وزیراعظم پیٹرول کی قیمتیں بڑھا کر کہتے ہیں عوام کو ریلیف دے رہے ہیں، وزیراعظم ریلیف دے نہیں، مانگ رہے تھے،پیٹرول کی قیمتوں میں اضافے سے ہر چیز مہنگی ہو گی، پہلے ہی مہنگائی کی شرح 14.31 فیصد ہو چکی ہے، حکومت عوام پر رحم کرے اور تیل کی قیمتیں واپس لے۔انہوں نے کہا کہ احتجاج کا ہمیں جواب دیا جانا چاہیے ،وزیراعظم کا ریلیف پیکج عوام کے ساتھ مذاق ہے،حکمران عالمی مالیاتی ادارے( آئی ایم ایف) کے غلام بن کر رہ گئے ہیں، حکومت نے ماضی میں جو کشکول توڑنے کے دعوے کئے اب انکی وہ کلپس چلائیں، موجودہ حکومت دنیا کی مقروض حکومت ہے، سکینڈلز میں ملوث مافیا کی حکومت نے کیا تحقیقات کی ہیں ؟حکومت سمجھتی ہے کہ یہ جوابدہی سے بالا ہے۔ سینیٹر شیری رحمان نے کہاکہ گزشتہ 3 سال میں کوکنگ آئل کی قیمتوں میں 130 فیصد اضافہ ہوا ہے، تباہی سرکار سے پہلے کوکنگ آئل کی قیمت 160 روپے کلو تھی جو اب 369 روپے ہو چکی ہے، خوردنی تیل کی مارکیٹ پر قابض مافیا اربوں منافع کما رہا ہے اور حکومت خاموش ہے، ہم خوردینی تیل سکینڈل متعلق تحقیقات کا مطالبہ کرتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں